سب سے اولی و اعلی ہمارا نبی

سب سے اولی و اعلی ہمارا نبی

سب سے بالا و والا ہمارا نبی

اپنے مولی کا پیارا ہمارا نبی

دونوں عالم کا دولہا ہمارا نبی

کیا خبر کتنے تارے کھلے چھپ گئے

پر نہ ڈوبے نہ ڈوبا ہمارا نبی

خلق سے اولیاء اولیاء سے رسل

اور رسولوں سے اعلی ہمارا نبی

قرنوں بدلی رسولوں کی ہوتی رہی

چاند بدلی کا نکلا ہمارا نبی

جن کے تلوؤں کا دھون ہے آب حیات

ہے وہ جان مسیحا ہمارا نبی

جس نے مردہ دلوں کو دی جان ابد

ہے وہ جان مسیحا ہمارا نبی

کون دیتا ہے دینے کو منہ چاہیئے

دینے والا ہے سچا ہمارا نبی

غمزدوں کو رضا مژدہ دیجئے کہ ہے

بے کسوں کا سہارا ہمارا نبی

وہی رب ہے جس نے تجھ کو

وہی رب ہے جس نے تجھ کو ہمہ تن کرم بنایا

ہمیں بھیک مانگنے کو تیرا آستاں بتایا

تجھے حمد ہے خدایا

تمھیں حاکم برایا، تمھیں قاسم عطایا

تمھیں شافع خطایا، تمھیں دافع بلایا

کوئی تم سا کون آیا

وہ کنواری پاک مریم، وہ نفختہ فیہ کا دم

ہے عجب نشان اعظم، مگر آمنہ کا جایہ

وہی سب سے افضل آیا

ارے اے خدا کے بندو، کوئی میرے دل کو ڈھونڈو

میرے پاس تھا ابھی تو، ابھی کیا ہوا خدایا

نہ کوئی گیا نہ آیا

ہمیں اے رضا تیرے دل کا پتہ چلا بمشکل

در روضہ کے مقابل وہ ہمیں نظر تو آیا

یہ نہ پوچھ کیسا پایا